غزل دھوپ ہے کیا اور سایہ کیا ہے اب معلوم ہوا

IMG_1785

دھوپ ھے کیا اور سایہ کیا ھے

اب معلوم ہوا 

یہ سب کھیل تماشہ کیا ہے

اب معلوم ہوا

ہنستے پھول کا چہرہ دیکھوں

اور بھر آے آنکھ

اپنے ساتھ یہ قصہ کیا ہے

اب معلوم ہوا

ھم برسوں کے بعد بھی اسکو

اب تک بھول نہ پاۓ

دل سے اسکا رشتہ کیا ہے

اب معلوم ہوا

صحرا صحرا پیاسے بھٹکے

ساری عمر جلے

بادل کا اک ٹکڑا کیا ہے

اب معلوم ہوا

دھوپ ہے کیا اور سایہ کیا ہے اب معلوم ہوا
یہ سب کھیل تماشہ کیا ہے اب معلوم ہوا

 

You must be logged in to post a comment Login